پنجاب کا گریٹرتھل کینال کی منظوری نہ دینے پروفاق سے احتجاج

پنجاب کا گریٹرتھل کینال  کی منظوری نہ دینے پروفاق سے احتجاج

پی این این نیوز:وزیر اعلیٰ پنجاب چودھری پرویزالٰہی کی زیر صدارت صوبائی کابینہ کا پانچواں اجلاس ہوا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی کی زیرصدارت پنجاب کابینہ کا گریٹر تھل کینال معاہدے پردستخط نہ کرنے پروفاقی حکومت کے خلاف سخت احتجاج،پنجاب کابینہ کے اجلاس میں وفاقی حکومت کے رویے کی شدید مذمت کی گئی۔چودھری پرویز الٰہی کاکہنا تھا کہ وفاقی حکومت کی نااہلی کی وجہ سے ملکی خزانے سے ایک ارب ڈالر کا فالتوزرمبادلہ ضائع ہورہاہے۔چودھری پرویز الٰہی کاکہنا تھا کہ ایشین ڈویلپمنٹ بینک سے دوبارہ معاہدے کرنے کی صورت میں لاگت 2گنا سے زیادہ بڑھ جائے گی۔وفاقی حکومت نے ایشین ڈویلپمنٹ بینک سے معاہدہ نہ کر کے نہ صرف پنجاب بلکہ ملک کے سا تھ دشمنی کامظاہرہ کیاگیا ہے۔وفاقی حکومت پنجاب کے کسانوں کا معاشی قتل کررہی ہے۔وفاقی حکومت کارویہ پنجاب کو فوڈ باسکٹ بنانے کی کوششوں کو برباد کرنے کے مترادف ہے۔ گریٹر تھل کینال کا معاہدہ ہوتا تو کسانوں کو پانی ملتا اورگندم میں خودکفیل ہوتے جس سے گندم امپورٹ نہ کرنا پڑتی اورایک ارب ڈالر بچائے جاسکتے ہیں۔گریٹر تھل کینال معاہدے میں وفاقی حکومت نے اپنا شیئر نہیں دیا۔وفاقی حکومت نے گریٹر تھل کینال کے بارے میں ایشین ڈویلپمنٹ بینک سے معاہدے پر دستخط نہیں کیے۔پنجاب حکومت اپنے حق کیلئے آخری حد تک جائے گی۔ملک کا بیڑا غرق کرنے والے معیشت کو کیسے سنبھال سکتے ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں